حکومتِ پاکستان، یونیسف اور عالمی ادارہ صحت کی پاکستانی عوام سے عید الاضحیٰ منانے کے دوران کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے میں معاون رویوں پر سختی سے عمل درآمد کرنے کی درخواست

28 جولائی 2020
Dr Zafar mirza
UNICEF

اسلام آباد، 28 جولائی 2020 – آج کے روز قومی وزارتِ صحت، یونیسف اور عالمی ادارہ صحت نے ایک اہم آن لائن اجلاس کے دوران لوگوں پر زور دیا کہ وہ عید الا ضحیٰ مناتے ہوئے کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لئے تجویز کردہ رویوں پر سختی سے عمل کریں تاکہ آنے والی عید محفوظ انداز میں منائی جاسکے۔

اجلاس کی صدارت وزیرِ اعظم پاکستان کے معاونِ خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کی۔ اس آن لائن اجلاس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ یہ پاکستان کے ہر فرد کا فرض ہے کہ وہ خود کو اور اپنے پیاروں کو کورونا وائرس سے بچانے کے لئے اپنا کردار ادا کرے۔ عید الاضحیٰ کے دنوں میں کورونا وائرس سے بچاؤ کا باعث بننے والے رویے اپنانے کا مقصد وزیر اعظم عمران کی طرف سے پیش کئے گئے معیاری عملی اقدامات (ایس او پیز) پر عمل درآمد کرتے ہوئے  وائرس کے پھیلاؤ کو ایک بار پھر اس نکتہ عروج تک پہنچنے سے روکنا ہے جس تک وہ عید الفطر کے بعد پہنچ گیا تھا۔

اس موقع پر بات کرتے ہوئے ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا’’  ہم اس وقت اس وبائی صورتِ حال سے جنگ کے ایک اہم مرحلے پر ہیں۔ اس وقت کیسز کی تعداد میں بہت حد تک کمی واقع ہوچکی ہے اور اس مرحلے پر ہم اُس غفلت اور کاہلی کے متحمل نہیں ہوسکتے جس کا تجربہ ہمیں عید الفطر کے دنوں میں ہوا تھا۔

نہ صرف کووڈ 19 کی وبا سے پیدا ہونے والے حالات نے ملک بھر میں لوگوں کی زندگیوں اور صحت کو بُری طرح متاثر کیا ہے بلکہ اس کی وجہ سے اہم خدمات کی فراہمی کے سلسلے پر بھی تباہ کن اثرات مرتب ہوئے ہیں۔  ان خدمات  میں صحت، غذا، تعلیم ، پانی اور صحت و صفائی جیسی بنیادی خدمات شامل ہیں۔

اس موقع پر بات کرتے ہوئے پاکستان میں یونیسف کی نمائندہ مس عائدہ گرما نے کہا، ’’ ہم اس وقت کورونا وائرس کے خلاف جنگ کے اہم ترین مرحلے میں داخل ہوچکے ہیں۔ اس جنگ میں مارچ کے مہینے سے ہماری قیادت وزیرِ اعظم پاکستان کے    معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اور ان کے اہم شراکت دار کررہے ہیں ۔ ان کے علاوہ خدمت کے لئے وقف ہیلتھ ورکرز کا ہراول دستہ بھی کلیدی کردار ادا کرنے میں مصروفِ عمل ہے‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’ اس وقت جب ہم میں سے ہر ایک اپنے پیاروں کے ساتھ عید الاضحیٰ منانے کی تیاریوں میں مصروف ہے ہم پر وہ رویے اپنانا لازم ہوجاتا ہے جن کی مدد سے ہم اپنے خاندان اور قرب و جوار کے لوگوں کی زندگیاں کورونا وائرس کا پھیلاؤ روک کر محفوظ بنا سکتے ہیں۔ ہم ان رویوں پر جس

قدر سختی سے عمل کریں گے ، اتنی ہی جلدی ہم معمول کی زندگی گذارنے کے قابل ہوکر اپنے بچوں اور خاندانوں کو وہ تمام ضروری خدمات فراہم کرسکیں گے جن کی انہیں بے حد ضرورت ہے۔ ان خدمات

میں قابلِ انسداد بیماریوں سے بچاؤ کے لئے ویکسین دینا، غذائی خدمات کے ذریعے نشو و نما کی کمی کا شکار ہونے والے بچوں کو بچانا اور بچوں و نو بالغوں کو تعلیم کی مدد سے اپنا مستقبل تشکیل دینے کے قابل بناکر لوگوں کا معیارِ زندگی بہتر بنانا شامل ہیں‘‘۔

حکومتِ پاکستان یونیسف اور عالمی ادارہ صحت کے تعاون سے ملک بھر میں ان ضروری خدمات کے فراہمی کے آغاز اور ان کا تسلسل برقرار رکھنے کے عمل کو یقینی بنانے کے سلسلے میں مصروفِ عمل ہے۔ پولیو کے زیادہ خطرات کا سامنا کرنے والے اضلاع میں پولیو کے خاتمے کے لئے ویکسین پلانے کے سلسلے کا آغاز پہلے ہی ہوچکا ہے۔

پاکستان میں عالمی ادارہ صحت کی نمائندہ ڈاکٹر پالیثا گورنارتھنا ماہیپالا نے اس موقع پر  حکومتِ پاکستان کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ عالمی ادارہ صحت پاکستان کی کوششوں کو سراہتا ہے کہ کووڈ 19 کے تناظر میں حکومتِ پاکستان نے اپنے شراکت داروں خاص طور پر عالمی ادارہ صحت اور یونیسف کے ساتھ مل کر ملک بھر میں صحت کی ضروری خدمات کی فراہمی کا آغاز کردیا ہے۔  پاکستان کے کئی اضلاع میں پولیو سے بچاؤ کی ویکسین پلانے کا سلسلہ ایک بار پھر کامیابی سے شروع ہوچکا ہے۔ عالمی ادارہ صحت وزیر اعظم پاکستان اور ڈاکٹر ظفر مرزا کی قیادت کو کووڈ 19 کی وبا کے دنوں میں کورونا وائرس سے جنگ کے عمل کو سراہتا ہے‘‘۔

اسلامی نظریاتی کونسل کے چئیرمین ڈاکٹر قبلہ ایاز، بین الاقوامی کرکٹ کے کھلاڑی محمد رضوان، پمز اسلام آباد میں کووڈ 19 کے فوکل پرسن ڈاکٹر نسیم اور 15 سالہ عریشہ فاطمہ نے اس موقع پر ویڈیو پیغامات ریکارڈ کئے۔ یہ پیغامات اس دوران چلائے گئے جن میں لوگوں سے درخواست کی گئی کہ وہ وائرس کے خلاف متحرک ہوکر لوگوں کی زندگیاں بچانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ 

اپنے آپ کو کورونا وائرس سے بچانے کے لئے لوگوں کو چاہیے کہ وہ:

  • عوامی اجتماعات سے دُور رہیں 
  • خریداری اور حتیٰ کہ مسجد کے لئے گھر سے نکلتے وقت ماسک پہن کر نکلیں
  • اپنے ہاتھ باقاعدگی سے صابن اور صاف پانی سے 20 سیکنڈز تک دھوئیں یا پھر  ہاتھوں کو جراثیم سے پاک کرنے والا محلول استعمال کریں۔
  • ہاتھوں کو دھوئے اور جراثیم سے پاک کئے بغیر اپنی آنکھوں، ناک، منہ اور کانوں کو چھونے سے گریز کریں۔
  • دوسرے لوگوں سے کم از کم چھ فٹ کے فاصلے پر رہیں۔
  • اگر ان میں کووڈ 19 کی علامات ظاہر ہوں تو اپنے گھر تک محدود رہیں۔

میڈیا رابطے

Abdul Sami Malik
Communication Specialist
UNICEF Pakistan
ٹیلیفون: +92-300-855-6654
ٹیلیفون: +92-51-209-7811
ای میل: asmalik@unicef.org

About UNICEF

UNICEF promotes the rights and wellbeing of every child, in everything we do. Together with our partners, we work in 190 countries and territories to translate that commitment into practical action, focusing special effort on reaching the most vulnerable and excluded children, to the benefit of all children, everywhere.

For more information about UNICEF and its work for children, visit www.unicef.org

Follow UNICEF on Twitter, Instagram and Facebook