یو این ایچ سی آر، آئی او ایم اور یونیسیف پاکستان میں پناہ گزین بچوں اور خاندانوں کے تحفظ کا مطالبہ کرتے ہیں

10 نومبر 2023

اسلام آباد، 3 نومبر 2023: پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ادارے (یو این ایچ سی آر)، عالمی ادارہ مہاجرت (آئی او ایم) اور عالمی ادارہ برائے اطفال (یونیسف) نے ، "غیر قانونی طورپر مقیم غیر ملکیوں کی واپسی کے منصوبے" سے متاثرہونے والے بچوں اور خاندانوں کے تحفظ اور ان کی بہبود کے حوالے سے  گہری تشویش کا اظہار کیا ہے اور اس منصوبے کے عمل درآمد کے ممکنہ نتائج سے چوکنا کیا ہے۔

پاکستان میں مقیم  افغانو ں کی اکثریت  گرفتاری یا ملک بدری کے خوف کی وجہ سے واپس جا رہی ہے۔ جبکہ افغانستان پہلے ہی انسانی حقوق کے حالیہ مسائل اور سخت سردیوں کے موسم کے باعث انسانی بحران کا شکار ہے۔ تقریباً 30 ملین افراد کو انسانی امداد کی ضرورت ہے اور 3.3 ملین لوگ بے گھر ہوچکے  ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق 15 ستمبر 2023 سے اَب تک 160,000 افغانی پاکستان چھوڑ چکے ہیں۔ ان میں سے86 فیصد خاندانوں نے بتایا کہ ان کی بھاری اکثریت گرفتاری کے خوف کی وجہ سےبڑی جلدی اور  بغیر مدد کے چلی گئی ہے۔

پاکستان نے ان  پناہ گزینوں کی میزبانی کرکے ایک قابل فخر روایت قائم کی ہے جس کی بدولت  لاکھوں لوگوں کی جانیں بچائی گئیں۔ اس مہمان نوازی اور سخاوت کی اَب بھی ضرورت ہے۔

اگرچہ حکومت پاکستان کے اس منصوبے کے پہلے مرحلے کے دوران غیر قانونی طور پر مقیم  غیر ملکیوں کی وطن واپسی کا ذکر کیا گیا ہے لیکن رجسٹرڈ مہاجرین اور قانونی دستاویزات رکھنے افغانوں سمیت  افغان شہریت کارڈ ہولڈرز اور آباد کار افغان باشندوں کو بھی تحفظ فراہم کرنے کی یقین دہانیوں کے باوجود دباؤ ڈالا جارہا ہے۔ ان میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔ آئی او ایم کوایسے  لوگوں کے گھروں کو نشانہ بنائے جانے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

بچوں کو پاکستان میں آنے جانے کے دوران، حراستی مراکز میں ، سرحدوں کو عبور کرنے اور افغانستان واپس جانے کے دوران شدید تحفظ کے خطرات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ان حالات میں بچوں کو اپنی حفاظت، خاندانی علیحدگی، پریشانی، خوف، بدسلوکی اور استحصال جیسے حقیقی خطرات کا سامنابھی  کرنا پڑتا ہے۔

 تعلیم اور صحت کی دیکھ بھال اور خوراک اور رہائش جیسی بنیادی ضروریات تک بچوں کی رسائی بری طرح متاثر ہو سکتی ہے۔

مزیدبرآں  رجسٹرڈ افغان مہاجرین پشاور اور کوئٹہ میں قائم یو این ایچ سی آر کے رضاکارانہ وطن واپسی کے مراکز سے بھی رجوع کر رہے ہیں اور واپسی کے لیے امداد کی درخواست کر رہے ہیں۔ یو این ایچ سی آر اور آئی او ایم انھیں امداد فراہم کرنے کے لیے اپنی استعداد کار میں اضافہ کر رہے ہیں۔ سردیوں کے دوران رضاکارانہ واپسی کی رفتار عام طور پر سست ہوجاتی ہے۔

یو این ایچ سی آر کی نمائندہ فلیپا کینڈلر نے یہ بات زور دے کر کہی ہے کہ "ہر قسم کی وطن واپسی رضاکارانہ اور محفوظ اور منظم انداز میں کی جانی چاہیے نیز ان ضرورت مند لوگوں کےحقوق اور تحفظ کا مکمل احترام کیا جا نا چاہیے"۔

یو این ایچ سی آر اور آئی او ایم نے پاکستان کے متعلقہ  حکام کے ساتھ گہری مشاورت کرنے  سمیت  اس بات کی وکالت بھی کی کہ جن لوگوں کی حفاظت کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے، حکومت ایسے  غیر قانونی طورپر مقیم غیر ملکیوں کو یکم نومبر تک ملک چھوڑنے کی آخری تاریخ سے مستثنیٰ کردے۔

آئی او ایم کی چیف آف مشن میو ساتو نے کہا کہ’’ہم  پاکستانی حکام سے اپیل کر رہے ہیں کہ وہ مسائل کے شکار لوگوں سمیت  بچوں اور خاندانوں کو ایسی صورت حال میں واپس نہ بھیجیں جہاں ان کی زندگیوں کو خطرہ لاحق ہو۔‘‘

یو این ایچ سی آر اور آئی او ایم ایسے لوگوں کو رجسٹر کرنے، ان کا انتظام کرنے اور ان کی اسکریننگ کرنے کے لیے ایک طریقہ کار تیار کرنے کے سلسلے میں پاکستان کی مدد کرنے کے لیے اپنی پیشکش کا اعادہ کرتے ہیں جنھیں اس ملک میں مسلسل تحفظ کی ضرورت ہے۔

’’بڑھتے ہوئے خطرے کے اس وقت، یونیسف حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ اپنی سرحدوں کے اندر تمام بچوں کے حقوق کو برقرار رکھنے اور ان کے تحفظ کے لیے اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرے۔ بچہ بچہ ہوتا ہے۔ ہر جگہ بچوں کو عزت کے ساتھ جینے کے لیے ہر وقت محفوظ رہنا چاہیے، تاکہ وہ بڑھ سکیں، سیکھ سکیں اور اپنی پوری صلاحیتوں تک پہنچ سکیں ‘‘  یونیسف کے پاکستان کے نمائندے عبداللہ فادل نے کہا۔

یو این ایچ سی آر ، آئی او ایم اور یونیسف نے عالمی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ پاکستان میں مسائل کے شکار بچوں اور خاندانوں اور پناہ گزینوں کی میزبانی کے لیے اپنے تعاون  و اشتراک کو فروغ دے ۔

میڈیا رابطہ:

یو این ایچ سی آر: قیصر خان آفریدی، یو این ایچ سی آر پاکستان کے ترجمان، afridiq@unhcr.org / +92-300-5018696

آئی او ایم: سوزانا پاکلر، سینئر پروگرام کوآرڈینیٹر، spaklar@iom.int / +92-300-5005862

یونیسف: سمیع ملک، یونیسف پاکستان، asmalik@unicef.org / +92-300-8556654

میڈیا رابطے

Abdul Sami Malik
Communication Specialist
UNICEF Pakistan
ٹیلیفون: +92-300-855-6654
ٹیلیفون: +92-51-209-7811
ای میل: asmalik@unicef.org

About UNICEF

UNICEF promotes the rights and wellbeing of every child, in everything we do. Together with our partners, we work in 190 countries and territories to translate that commitment into practical action, focusing special effort on reaching the most vulnerable and excluded children, to the benefit of all children, everywhere.

For more information about UNICEF and its work for children, visit www.unicef.org

Follow UNICEF on Twitter, Instagram and Facebook